بھارت میں‌ خواتین اراکین پارلیمنٹ کی حوس کا نشانہ بننے لگیں

شیئر کریں:

بھارتی ریاست اترپردیش کےرکن اسمبلی کی زیادتی کا شکار خاتون نے خودکشی کرلی
24 سالہ خاتون نے الزام عائد کیا تھا کہ اتل رائے نامی رکن پارلیمنٹ نے اسے جنسی درندگی کا نشانہ بنایا تھا۔
خاتون 2019 سے انصاف کے لیے در بدر کی ٹھوکریں کھا رہی تھی۔

زیادتی کا شکار لڑکی نے انصاف نہ ملنے پر سپریم کورٹ کے باہر خود کو آگ لگا لی۔
زیادہ جل جانے کی وجہ سے خاتون اسپتال میں انتقال کر گئی۔
مئی 2019 میں رکن اسمبلی اٹل رائے پر خاتون نے زیادتی کا الزام عائد کیا تھا۔

بھارت خواتین کے لیے غیر محفوظ، گوا میں دو روسی خواتین قتل

اٹل رائے نے الزام کے جواب میں خود کو پولیس کے سامنے سرینڈر کیا اور تب سے اب تک جیل میں ہے۔
پولیس کا کہنا ہے کہ نومبر 2020 میں ملزم کی جانب سے خاتون کے خلاف فراڈ کا مقدمہ درج کروایا گیا تھا۔

خاتون اپنے خلاف مقدمہ درج ہونے اور ناقابل ضمانت وارنٹ گرفتار جاری ہونے پر دلبرداشتہ تھی۔
خاتون انصاف کے لیے اترپردیش سے دہلی آئے اور اسے نے خود کو آگ لگانے سے قبل فیس بک پر
براہ راست بتایا کہ پولیس جان بوجھ کر ملزم اور اس کے ساتھیوں کو بچانے میں لگی ہوئی ہے۔
انصاف فراہم کی بجائے ہراساں کیا جارہا ہے۔


شیئر کریں: