بھارتی گرو نے کورونا دوا بنالی، سو فیصد مریضوں کی صحتیابی کا دعوی

شیئر کریں:

بھارت اپنے تانتریوں کی وجہ سے نہ صرف خبروں کی زینت رہتا ہے بلکہ جگ ہنسائی کا سامنا بھی بنتا ہے۔
گائے موتر اور گوبر کے بعد بھارت میں کورونا کے علاج کا نیا دعوی سامنے آیا ہے۔
یہ دعوی کسی ڈاکٹر یا سائنس دان نے نہیں بلکہ یوگا گرو بابا رام دیو نے کیا ہے۔

رام دیو کا کہنا ہے کہ ان کی دوا ساز کمپنی نے کورونا وائرس کی علاج کی دوا تیار کرلی ہے۔
س دوا کے ذریعہ 7 دن کے اندر مریض صحت یاب ہوجائے گا۔
دوا کا نام کورونیل اور سوا سری بتایا گیا ہے۔
ادھر بھارت کی وزارت صحت نے اس دعوی کو مسترد کردیا ہے اور دوا کے لیے اشتہارات روکنے کی خواہش کی ہے۔
حکومت نے اس میں استعمال کی جانے والی تمام اجزاء کی تفصیلات طلب کی ہیں۔

حکومت نے اعلامیہ جاری کرتے ہوئے بتایا کہ کوئی بھی کمپنی حکومت کی منظوری
کے بغیر کورونا وائر س کے علاج کے سلسلہ میں کسی بھی دوا کی تشہیرنہیں کرسکتی۔
بابا رام دیو نے کہا کہ کہ اس دوا کے ذریعہ سو فیصد کورونا کے مریض ٹھیک ہوجاتے ہیں۔
بابا رام دیو نے کہا کہ ملک کے مختلف شہروں میں 280 مریضوں پر
جانچ کی ہے جس میں سو صد فیصد نتائج برآمد ہوئے ہیں۔


شیئر کریں: