بھارتی حکومت نے گینگسٹر ویکاس دوبھے کو استعمال کے بعد پولیس تحویل میں مروا دیا

شیئر کریں:

بی جے پی کی حکومت نے اپنے گناہوں کو چھپانے کے لیے گینگسٹر ویکاس دوبھے کو قتل کروا دیا۔
ویکاس دوبھے آٹھ پولیس اہلکاروں کے قتل میں ملوث تھا۔
ملزم کئی روز سے مفرور تھا اور بھارت کی کئی ریاستوں کی پولیس ملزم کو گرفتار کرنے میں ناکام تھی۔
ملزم کی گرفتاری کے لیے پولیس نے پانچ لاکھ کا انعام بھی رکھا تھا۔
ملزم ویکاس دوبھے پر الزام تھا کہ وہ ریاست اتراپردیش میں بی جے پی کی حکومت کے لیے کام کرتا تھا اور غیرقانونی کاموں میں ملوث تھا۔

مودی اور ہٹلر کے مظالم میں کوئی فرق نہیں

ویکاس دوبھے کا پولیس میں بھی اثر و رسوخ تھا۔
گزشتہ ماہ ملزم کی گرفتاری کے لیے آنے والے آٹھ پولیس اہلکاروں کو قتل کرکے ملزم فرار ہوگیا تھا۔
ویکاس دوبھے نے گزشتہ روز خود کو مدھیہ پردیش میں پولیس کے حوالے کردیا تھا۔
آج صبح مدھیہ پردیش پولیس نے خود ساختہ انکاونٹر میں ویکاس دوبھے کو قتل کردیا۔
پولیس کا کہنا ہے کہ ملزم نے ایک پولیس اہلکار کا پستول نکال کر فائرنگ کرنے کی کوشش کی۔
پولیس کی جوابی کارروائی میں ملزم ہلاک ہوگیا۔
دوسری طرف کانگرس سمیت دیگر سیاسی جماعتوں نے جرائم پیشہ عناصر کی
سرپرستی پر بی جے پی کے کردار پر سوال اٹھا دیے ہیں۔
بی جے پی کے کئی سینئر اراکین ملزم کے ساتھ رابطے میں تھے۔

بھارت میں انسانیت کی بےحرمتی، قتل اورتذلیل

ادھر بھارتی شہریوں نے بھی پولیس کی تحویل میں ملزم کی ہلاکت کر سوال اٹھادیے ہیں۔
سوشل میڈیا صارفین کا کہنا ہے کہ بی جے پی حکومت کو ڈر تھا کہ ان کے جرائم سے پردہ نہ اٹھ جائے۔
ملزم کو تھرڈ کلاس ہندی فلم کے اسٹائل میں قتل کیا گیا۔
یاد رہے کہ اس سے پہلے بھی جی جے پی پر ملزموں کی پشت پنائی
اور انہیں اپنی پارٹی میں جگہ دینے کے الزامات کا سامنا ہے۔
ابھی بھی بھارت کی راج سبھا اور لوگ سبھا میں بی جے پی کے
ایک درجن سے ایسے رہنما ہیں جو ماضی میں جرائم میں براہ راست ملوث تھے۔


شیئر کریں: