بوسنیا، ہرزیگووینا اور پاکستان قریب سے قریب تر

انسٹی ٹیوٹ آف اسٹریٹجک اسٹڈیز اسلام آباد (آئی ایس ایس آئی) اور بلقان اسٹڈیز سینٹر (بی ایس سی) سراجیوو
کے درمیان تعاون کے پروٹوکول پر دستخط کی تقریب ہوئی.
ورچوئل تقریب میں انسٹی ٹیوٹ آف اسٹرٹیجک اسٹڈیز اسلام آباد اور بین الاقوامی یونیورسٹی آف سراجیوو
(آئی یو ایس) کے بلقان اسٹڈیز سینٹر (بی ایس ) نے ایک ‘تعاون پروٹوکول’ کا اختتام کیا۔
ڈائریکٹر جنرل آئی ایس ایس آئی سفیر سہیل محمود اور آئی یو ایس کے ریکٹر پروفیسر ڈاکٹر احمد یلدرم نے
دستخط کیے، یہ پاکستان اور بوسنیا اینڈ ہرزیگووینا کے تھنک ٹینکس کے درمیان اپنی نوعیت کا پہلا تعاون
پروٹوکول ہے۔
اس موقع پر سراجیوو میں پاکستانی سفارتخانے کے ڈپٹی ہیڈ آف مشن ڈاکٹر شکیب رفیق بھی موجود تھے۔

آئی ایس ایس آئی کے سینٹر فار اسٹریٹیجک پرسپیکٹیو (سی ایس پی) کی ڈائریکٹر ڈاکٹر نیلم نگار نے آئی یو
ایس کے شرکاء کو انسٹی ٹیوٹ کے کام اور دنیا بھر کے مختلف تھنک ٹینکس اور تحقیقی اور تعلیمی اداروں
کے ساتھ اس کے آؤٹ ریچ پروگرام کے بارے میں آگاہ کیا۔
تعاون پروٹوکول پر دستخط کا خیرمقدم کرتے ہوئے ڈی جی ایمبیسڈر سہیل محمود نے کہا اس سے آئی ایس
ایس آئی اور بی ایس سی کے درمیان ایک طویل مدتی ادارہ جاتی تعلقات قائم کرنے میں مدد ملے گی. دونوں
فریقوں کو معیاری تحقیق اور مشترکہ دلچسپی کے امور پر پالیسی ڈائیلاگ کو فروغ دینے میں نتیجہ خیز
تعاون کرنے میں مدد ملے گی۔
انہوں نے پاکستان اور بوسنیا اینڈ ہرزیگووینا کے درمیان خوشگوار تعلقات پر بھی روشنی ڈالی اور کہا اس
پروٹوکول پر دستخط دونوں ممالک کی قیادت کے عوام سے عوام کی سطح پر قریبی روابط استوار کرنے کے
وژن سے مطابقت رکھتے ہیں۔
ریکٹر آئی یو ایس پروفیسر ڈاکٹر احمد یلدرم نے ان تمام لوگوں کو سراہا جنہوں نے موجودہ اقدام میں سہولت
فراہم کی، اور کہا کہ بی ایس سی تعاون کے فریم ورک کے اندر ایک نتیجہ خیز شراکت داری اور مشترکہ
سرگرمیوں کا منتظر ہے۔ انہوں نے بوسنیا، ہرزیگووینا اور پاکستان کے درمیان قریبی، خوشگوار تعلقات
کی طرف بھی اشارہ کیا۔

ڈاکٹر شکیب رفیق نے دونوں اداروں کو تعاون کے پروٹوکول پر دستخط کرنے پر مبارکباد پیش کی اور اس بات
پر زور دیا کہ یہ پاکستان اور بوسنیا اینڈ ہرزیگووینا کے تھنک ٹینکس کے درمیان اپنی نوعیت کا پہلا پروگرام
ہے اور مستقبل میں مزید بہت کچھ کرنے کا باعث بنے گا۔ یہ تعاون دونوں ممالک کے درمیان بڑھتے ہوئے
نتیجہ خیز دو طرفہ تعلقات کا حصہ ہو گا۔