برطانیہ کی یونی ورسٹی کے بیت الخلا میں بچے کی پیدائش

شیئر کریں:

برطانیہ کی یونی ورسٹی ساؤتھ ہیمسٹن کی ایک طالبہ پیٹ میں تکلیف کی وجہ سے بیت الخلاء گئی اور وہاں اس
نے بچے کو جنم دیا جس سے وہ دنگ رہ گئی۔
طالبہ جیس ڈیوس بچے کی پیدائس کے اگلے روز بیس سال کی ہوئی ہیں۔ انہیں معلوم ہی ہوسکا کہ وہ امید سے ہیں۔
وہ یہ سمجھی کی ماہواری کی وجہ سے پیٹ میں تکلیف ہورہی ہے اس لیے بیت الخلا کا رخ کیا۔

بیٹے کی پیدائش پر وہ حیران ہو گئی اور کہا پہلے میں سمجھی کہ یہ کوئی خواب ہے لیکن وہ تو حقیقت میں ماں
بن چکی تھی۔ بچے کا وزن تین کلو تھا۔
کسی بھی تعلیمی ادارے کے واش روم میں‌ بچے کی پیدائش کا یہ غالبا اولین واقعہ ہے جس نے ساؤتھ ہیمسٹن
یونی ورسٹی کے تمام طلبہ و طالبات کو حیران کر دیا ہے.


شیئر کریں: