بارسلونا میں چہلم شہدائے کربلا پر مجالس اور نیاز

شیئر کریں:

بارسلونا سے کرن خان

دنیا بھر کی طرح نواسہ رسول صلی اللہ علیہ والیہ وسلم حضرت امام حسین علیہ السلام کا چہلم
اسپین میں بھی عقیدت و احترام سے منایا گیا۔

مرکز ولائیت امام بارگاہ القائم سنٹر بارسلونا میں چہلم شہدائے کربلا کی مناسبت سے مجلس بپا کی گئی۔
اسپین کی اس مرکزی مجلس میں بارسلونا کے گرد و نواح سے بھی بڑی تعداد میں سوگوار شریک ہوئے۔
ذاکر اہلیبیت سید سبط الحسن، کرامت جعفری اور احمد حسن نے شہادت حضرت امام حسین علیہ السلام بیان کی۔


حسینی تحریک میں چہلم حضرت امام حسین علیہ السلام کو خاص مقام حاصل ہے۔
حضرت امام حسین علیہ السلام سے محبت کا پہلا چشمہ چہلم ہی کے دن جاری ہوا۔
اس طاقتور حسینی مقناطیس نے سب سے پہلے چہلم کے دن دلوں کو اپنی طرف کھینچا۔
جابر بن عبداللہ انصاری اور عطیہ کا روز چہلم حضرت امام حسین علیہ السلام کی قبر کی زیارت کیلیے
جانا ہی اس بابرکت رسم کا آغاز تھا۔

صدیوں پہلے شروع ہونے والی یہ عزاداری ہر زمانے سے زیادہ عظیم، پررونق اور پرشکوہ ہو چکی ہے۔
اس عظیم رسم نے دنیا میں روز بروز عاشورا کی یاد مزید زندہ کر دی ہے۔
چہلم اپنی ذات میں عاشورا کی جانب دوبارہ پلٹنے کا نام ہے۔
روایت ہے اہل بیت اطہار علیہم السلام شام میں یزید کی قید سے رہائی پانے کے بعد چہلم کے دن ہی
کربلا میں داخل ہوئے۔ روایات کی روشنی میں زیارت اربعین مومن کی علامات میں سے ایک علامت
قراردی گئی ہے۔

کربلا والوں کی یاد میں دوسری بڑی مشی پاکستان یا نائیجیریا میں ہوتی ہے؟

یہ سب کچھ شاید اس نکتے کی یاد دہانی ہو کہ اہل ایمان کو چاہئے کہ وہ کربلا کو اپنی زندگی کا راستہ
قرار دے اور اپنی زندگی کی تمام سرگرمیاں اسی مرکز کے گرد منظم کرے۔

اسی طرح ایمانی معاشرہ بھی کربلا کے خورشید کی جانب متوجہ ہو اور چہلم درحقیقت اسی خورشید
تک پہنچنے کا راستہ ہے۔

مجلس سید الشہدا کے اختتام پر امام بارگاہ انتظامیہ کی جانب سے نیاز امام حسین علیہ السلام پیش کی گئی۔


شیئر کریں: