این سی او سی کی کورونا مریضوں کا اضافہ روکنے کے لیے بیداری مہم

شیئر کریں:

این سی او سی نے وبائی امراض میں اضافہ روکنے کے لیے عوامی بیداری مہم تیز کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔
نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سنٹر (این سی او سی) ملک میں کورونا وائرس کے وبائی مرض کا پھیلاؤ
روکنے کے لیے بڑے پیمانے پر عوامی شعور بیداری مہم کا آغاز کرنی جارہی ہے۔

وفاقی وزیر برائے ترقی و منصوبہ بندی اسد عمر کی زیرصدارت این سی او سی کا اجلاس ہوا۔

فورم کو بتایا گیا کہ ملک میں کورونا وائرس پھیلنے میں واضح طور پر کمی دیکھنے میں آئی ہے
لیکن ایس او پیز پر عملدرآمد میں کمی دیکھنے میں آئی ہے۔
عوامی مقامات پر ماسک اور سماجی فاصلوں پر عملدرآمد کے لیے بر وقت اقدامات لیے جائیں۔
مہلک بیماری پوری طرح سے ختم نہیں ہوئی اور اس بیماری سے مروجہ ایس او پیز پر عملدرآمد
کر کے ہی اس سے بچا جا سکتا ہے۔

جون کے وسط میں مریضوں کی تعداد بڑھنے سے اسپتالوں پر بوجھ بڑھا تو حکومت نے
اسپتالوں کی استعداد بڑھانے کے لیے ملک میں 2150آکسیجن بیڈز کو31 جولائی تک شامل
کرنے کے لئے عملی اقدامات شروع کیے۔

تاہم این سی او سی کی خصوصی ٹیموں کے تمام صوبوں بشمول آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان
کے دوروں سے 2850آکسیجن بیڈز کو شامل کرنے کے لئے عملی جامعہ پہنانے کی کوششیں
شروع کر دی گئیں۔

۔ اب تک2608 نئے آکسیجن بیڈز کو ملک بھر کے اسپتالوں میں شامل کر دیا گیا ہے۔
جس میں آزاد کشمیرمیں 80، بلوچستان میں 264، گلگت بلتستان میں 100، خیبر پختونخواہ
میں 400، پنجاب میں 787، سندھ میں 351اور اسلام آباد میں 626 آکسیجن بیڈز شامل
کیے گئے ہیں۔

242مزید نئے آکسیجن بیڈز(10خیبر پختونخواہ، 17پنجاب اور215سندھ) شامل کرنے کے
اوپر کام جاری ہے۔


شیئر کریں: