اٹلی میں ریچھ کو موت کی سزا کیوں سنائی گئی؟

شیئر کریں:

اٹلی میں انسانوں پر حملوں کےجرم میں جنگلی ریچھ کو عدالت نے موت کی سزا سنادی۔
ریچھ نے 59 سالہ فابیو میسورنی اور اسے کے 28 سالہ بیٹے پر حملہ کیا تھا۔
دونوں باب بیٹا ہائکنگ کر رہے تھے کہ جنگلی ریچھ نے ان پر حملہ کردیا۔
ریچھ نے فابیو کی ٹانگ پر کاٹا جس وجہ سے معمر شہری کی ٹانگ تین جگہ سے ٹوٹ گئی۔
باپ بیٹےپرحملہ کرنے کے بعد ریچھ دوبارہ جنگل میں بھاگ میں گیا۔
بعد میں تحقیقات کے بعد ریچھ کوموت کی سزا سنا دی گئی۔
بھورے ریچھ کوعمر قید کی سزا
ڈی این اے کے نمونوں سےپتہ چلا ہےکہ یہ جنگلی ریچھ کئی شہریوں پر حملوں میں ملوث ہے۔
دوسری طرف ریچھ کو سزائے موت کے خلاف جانوروں کی تحفظ کی تنظیمیں سامنے آگئی ہیں۔
تنظیموں نے مطالبہ کیا ہے کہ ریچھ کو موت کی سزا کا فیصلہ وآپس کیا جائے۔

اس بات کی مکمل تحقیقات کی جائیں کہ کہیں باپ بیٹا ریچھ کے علاقے میں تو نہیں داخل ہوئے تھے؟
جانوروں کے حقوق کی تنظمیوں کا کہنا ہے کہ ریچھ کو سزائے موت کا فیصلہ غیر انسانی ہے۔


شیئر کریں: