انگلینڈ کرکٹ ٹیم 15 سال بعد پاکستان کا دورہ کرنے پر تیار

شیئر کریں:

پاکستان میں پندرہ سال سے کرکٹ نہ کھیلنے والی انگلینڈ کی ٹیم نے باالاخر دورہ پر آمادگی
کا اظہار کر دیا ہے۔

انگلش کرکٹ ٹیم نے 2005 کے بعد پاکستان آنے کے لئے ہاں کر دی ہے تین ماہ کے اندر ہونے
والے مجوزہ دورے میں صرف 3 ٹی 20 کھیلے جائیں گے۔

انگلینڈ کرکٹ بورڈ نے گزشتہ شب تصدیق کی ہے کہ جنوری کے آخر یا فروری کے شروع میں
پاکستان کے مختصر دورہ پر بات چیت ہو رہی ہے۔

عمران عثمانی کے مطابق انگلینڈ کا اصل دورہ 2022 میں شیڈول ہے لیکن پاکستان نے دور کورونا
میں انگلینڈ کا دورہ کیا تو پھر خیر سگالی کے طور پر جوابی دورے کی بات ہوئی۔

خیال رہے انگلش ٹیم جنوری میں سری لنکا اور جنوری کے آخر سے مارچ تک بھارت کا دورہ کرے گی۔
اس کے درمیان 7 سے 10 دن کا وقفہ ہے اور اسی دوران یہ دورہ کیا جاسکتا ہے۔

ای سی بی نے کہا ہے کہ وہ دورے کے خواہش مند ہیں اور پاکستان کے لئے شکریہ کے طور پر محدود
اوورز ٹیم کو روانہ کرنا چاہتے ہیں۔

ای سی بی ترجمان کے مطابق وہ پاکستان کرکٹ بورڈ سے بات چیت کے بعد اس بات کی تصدیق کر
سکتے ہیں کہ انگلینڈ اینڈ ویلز کرکٹ بورڈ 2021 کے ابتدامیں پاکستان میں محدود اوورز کی سیریز
کھیلنے پر تیار ہے۔

ہم اس بات پر خوش ہیں کہ پاکستان میں کرکٹ واپس آرہی ہے اور ہم اس کے لئے اپنا بھی کردار
ادا کریں گے۔

ای سی بی کے مطابق پاکستان میں سکیورٹی مسائل،کووڈ-19 صورت حال اور بائیو سیکیور ببل کے
انتظامات سمیت اہم امور پر اگلے ہفتہ بات کریں گے کیونکہ کھلایڑیوں کی سلامتی وحفاظت بھی
اولین ترجیح ہے۔

انگلینڈ کرکٹ ٹیم کے پاکستان آنے کے بعد برطانوی نژاد پاکستانی وسیم خان جو اس وقت
پی سی بی کے چیف ایگزیکٹو ہیں۔

ان کے لئے بڑے اعزاز کی بات اور ان پر تنقید کرنے والوں کے لئے بڑی شرمناک بات ہوگی کہ
وسیم خان کامیاب ہوگئے ہیں۔
انہیں تقرری کے فوری بعد انگلینڈ کی پاکستان آمد کا ٹاسک بھی دیا گیا تھا۔
امکان ہے کہ تینوں میچز لاہور یا راولپنڈی میں کھیلے جائیں گے اور صدارتی سیکیورٹی سمیت
انتہائی کڑے انتظامات بھی کئے جائیں گے۔


شیئر کریں: