انسٹی ٹیوٹ فار پولیٹیکل اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز میں دو طرفہ مکالمہ

شیئر کریں:

انسٹی ٹیوٹ آف اسٹریٹجک اسٹڈیز اسلام آباد (آئی ایس ایس آئی) اور انسٹی ٹیوٹ فار پولیٹیکل اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز، ایران نے دو طرفہ اور علاقائی مسائل پر اپنے سالانہ مذاکرات کا انعقاد کیا۔ ڈائیلاگ کی سہولت سینٹر فار افغانستان، مڈل ایسٹ اینڈ افریقہ (کیمیا) نے آئی ایس ایس آئی میں کی تھی۔ مکالمے کو دو سیشنز میں تقسیم کیا گیا۔ پہلے سیشن کا عنوان پاکستان ایران دو طرفہ تعلقات تھا اور اس کی نظامت محترمہ آمنہ خان، ڈائریکٹر کیمیا نے کی۔
دوسرا سیشن ’علاقائی ترقیات: افغانستان میں موجودہ پیش رفت اور مشرق وسطیٰ میں بدلتی ہوئی حرکیات پر توجہ کے ساتھ‘ پر تھا اور اس کی نظامت ڈاکٹر حسین مولا عبد اللہ، ڈائریکٹر برائے ایشیائی مطالعات، انسٹی ٹیوٹ فار پولیٹیکل اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز نے کی۔ سفیر اعزاز احمد چوہدری، ڈائریکٹر جنرل آئی ایس ایس آئی اور ڈاکٹر محمد حسن شیخولیاسلامی، صدر، انسٹی ٹیوٹ فار پولیٹیکل اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز نے استقبالیہ کلمات کہے۔ معزز مقررین میں سفیر حسین ابراہیم خانی، سینئر ریسرچ فیلو، انسٹی ٹیوٹ فار پولیٹیکل اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز؛ سفیر خالد محمود، چیئرمین آئی ایس ایس آئی اور ایران میں پاکستان کے سابق سفیر؛ ڈاکٹر حسین مولا عبد اللہ، ڈائریکٹر برائے ایشین اسٹڈیز، انسٹی ٹیوٹ فار پولیٹیکل اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز؛ محترمہ آمنہ خان، ڈائریکٹر، سینٹر فار افغانستان، مڈل ایسٹ اینڈ افریقہ (کیمیا)؛ سفیر جاوید حفیظ، سابق پاکستانی سفارت کار اور ڈاکٹر علیرضا میریوسفی، سینئر ریسرچ فیلو، انسٹی ٹیوٹ فار پولیٹیکل اینڈ انٹرنیشنل اسٹڈیز۔


شیئر کریں: