امریکا کے پاس کل کتنے ایٹم بم ہیں؟

شیئر کریں:

دنیا کی سپرپارو کا اہم ترین راز بلآخر دنیا کے سامنے آہی گیا۔
امریکا نے فوج کے پاس موجود ایٹم بموں کی تعداد دنیا کو بتادی۔
امریکی محکمہ خارجہ کی طرف سے بتایا گیا ہے کہ
امریکا کے پاس ستمبر 2020 تک 3ہزار 750ایٹم بم تھے۔
اس سے ایک سال قبل اسی تاریخ کو امریکہ کے پاس 3ہزار 805ایٹم بم تھے۔ 2018ءمیں یہ تعداد 3ہزار 785تھی۔
امریکی محکمہ خارجہ کی طرف سے اپنی رپورٹ میں بتایا گیا
کہ 2003 میں امریکا کے پاس 10ہزار سے زائد ایٹم بم تھے۔
1967 میں امریکہ کے پاس سب سے زیادہ 31ہزار 255ایٹم بم ہوا کرتے تھے۔
امریکی محکمہ خارجہ کی طرف سے کہا گیا ہے کہ امریکہ اپنے ایٹمی ہتھیاروں میں کمی لا رہا ہے۔
اس سے دنیا میں ایٹمی ہتھیاروں کے پھیلاﺅ کو روکنے کے لیے کی جانے والی کوششوں میں مدد ملے گی۔

اسٹاک ہوم انٹرنیشنل پیس ریسرچ انسٹیٹیوٹ کی طرف سے
جنوری 2021ءمیں اپنی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ امریکا کے پاس 5ہزار 550ایٹم بم ہیں۔
انسٹیٹیوٹ نے اپنی اس رپورٹ میں ریٹائرڈ ایٹم بم بھی شمار کیے ہیں،
جو امریکی محکمہ خارجہ کی رپورٹ میں شمار نہیں کیے گئے۔
انسٹیٹیوٹ کی رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ امریکا کے مقابلے میں روس کے پ
اس 6ہزار 255، چین کے پاس 350، برطانیہ کے پاس 225اور فرانس کے پاس 290ایٹم بم ہیں۔
پاکستان، بھارت، اسرائیل اور شمالی کوریا کے پاس مجموعی طور پر 460ایٹم بم ہیں۔


شیئر کریں: