امریکا نے ایران کی المصطفی انٹرنیشنل یونیورسٹی پر پابندیاں عائد کردی

شیئر کریں:

امریکا نے طبی اداروں کے بعد ایران کے تعلیمی اداروں پر بھی پابندیاں عائد کرنا شروع کردی ہیں۔
دہشت گردی کا الزام لگا کر امریکا نے ایران کی بین الاقوامی جامعہ المصطفی پر پابندیاں عائد کردی ہے۔
امریکا نے الزام عائد کیا ہے المصطفی انٹرنیشنل یونیورسٹی دنیا بھر دہشت گردی پھیلا رہی ہے۔

امریکا نے الزام عائد کیا ہے المصطفی یونیورسٹی نہ صرف دنیا بھر شیعہ مکتبہ فکر کو پروموٹ کر رہی ہے
بلکہ دہشت گردی پر سیمینار بھی کر رہی ہے۔

امریکا کی وزارت داخلہ کا کہنا ہے کہ جامعہ بین الاقوامی امن کے لیے خطرہ ہے کیوں کہ یہ دہشت گردوں
کو داخلے دے رہی اور ان کی تربیت کا بندوبست بھی کر رہی ہے۔

یاد رہے کہ المصطفی انٹرنیشنل یونیورسٹی کے دنیا کے پچاس سے زائد ممالک میں کیمپس ہیں۔
امریکا نے الزام عائد کیا ہے کہ القدس فورس جامعہ کو استعمال کرتے ہوئے پاکستان سے دہشت گرد
بھرتی کر رہی ہے۔
امریکا کا مزید کہنا ہی کہ یہ جامعہ دنیا کے دیگر ممالک سے دہشت گرد بھرتی کر کے نہ صرف ان کی
تربیت کا بندوبست کرتی ہے بلکہ ایران اپنی پراکسی جنگوں میں ان دہشت گردوں کا استعمال بھی کرتا ہے۔

اس سے پہلے جامعہ الظہر یونی ورسٹی نے مصر کی تنظم اخوان المسلمون کو غیرشرعی قرار دیتے ہوئے
اس میں شمولیت کو حرام قرار دیا ہے۔
امریکا کا کہنا ہے کہ ایران کے لیے یونیورسٹی انتہائی اہمیت کی حامل ہے
اسی وجہ سے سال 2020-2021 کے لیے ایران نے 8 کروڑ ڈالر کی خطیر رقم صرف المصطفی یونیورسٹی
کے لیے مختص کی ہے


شیئر کریں: