March 25, 2020 at 8:52 am

کورونا وائرس کا پھیلاؤ روکنے کے لیے اسلام آباد میں جزوی لاک ڈاؤن سات اپریل تک کاری رہے۔
اسلام آباد میں تمام مارکیٹیں،شاپنگ مالز اور نجی دفاتر بندرہیں گے۔
بین الصوبائی،بین الاضلاعی اور شہر میں ہر قسم کی پبلک ٹرانسپورٹ پر پابندی رہے گی۔
میٹروبس سروس صبح ساڑھے8سےساڑھے10بجے تک اور شام ساڑھے3سےساڑھے5 بجے تک چلے گی۔
میٹرو بس کے مسافروں کے درمیان ایک سیٹ کا وقفہ لازمی ہو گا مسافر چپک کر نہیں بیٹھ سکیں گے۔
ٹیکسی چلانے کی اجازت ہوگی لیکن ہر قسم کے سماجی اور مذہبی اجتماعات پر مکمل پابندی رہے گی۔
اسلام آباد میں تمام لنگرخانے اور پناہ گاہیں کھلی رہیں گی۔
پابندی کا اطلاق سرکاری محکموں، اسپتال، کلینکس، لیبارٹرز اور میڈیکل اسٹورز پر نہیں ہوگا۔
لاک ڈاؤن کے دوران سیکیورٹی ادارے بنیادی خدمات کے ادارے اپنا کام جاری رکھیں گے۔
کھانے پینے کی اشیا کی خریداری اورعلاج کےلیے گھر سے نکلنے کی اجازت ہوگی۔
اعلامیہ کے مطابق اسلام آباد میں نماز جنازہ اور تدفین کی اجازت ہوگی۔
یوٹیلیٹی خدمات کے ادارے اور میٹروپولیٹن کارپوریشن ضروری خدمات جاری رکھے گی۔
سرکاری و نجی ٹیلی کام کمپنیاں اور متعلقہ ادارے بھی اپنا کام جاری رکھ سکیں گے۔
بینک بنیادی اسٹاف کے ساتھ اپنا کام جاری رکھیں گے اسی طرح دفاع،خوراک کی تیاری سے متعلق ادارے بھی اپنا کام جاری رکھیں گے۔
صحت اور صحت کی خدمات سے متعلق اداروں پر پابندی کا اطلاق نہیں ہوگا۔
کریانہ اسٹور،بیکریاں،آٹا چکی، تندور،گوشت، سبزی اور پھل کی دکانیں کھلی رہیں گی۔
آٹوورکشاپ،پٹرول پمپس اور تیل ڈپو بھی پابندی سے مستثنیٰ ہوں گے۔
ریسٹورنٹ سے ٹیک آوے اور ہوم ڈیلوری سروسز جاری رہیں گی۔
لاک ڈاؤن کے دوران ڈرائی پورٹ اور کسٹمز خدمات کام جاری رکھیں گے۔
اسلام آباد میں فلاحی ادارے اورمیڈیابھی پابندی سے مستثنیٰ ہوں گے۔
اسلام آباد کی حدود میں نجی گاڑی میں ایک شخص سفر کرسکےگا۔
طبی ایمرجنسی کی صورت میں 2افراد مریض کے ساتھ جاسکتےہیں۔
گھر سے باہر نکلنے والے افراد کےلیے قومی شناختی کارڈ لازمی قرار دیا گیا ہے۔
بڑےڈیپارٹمنٹل اسٹورز پرکھانے اور ادویات کے علاہ تمام حصےبند رہیں گے۔

Facebook Comments