اسلام آباد میں سفری سہولت سے محروم افراد کے لیے خوش خبری

شیئر کریں:

اسلام باد کے شہریوں کے لیے خبروالے بڑی خوشخبری لائے ہیں ۔ وزیراعظم میاں شہبازشریف کی ہدایت پر کل سے اسلام آباد میٹرو بس سروس توسیعی منصوبے کا آزمائشی بنیادوں پر آغاز ہونے جارہا ہے۔
شہباز شریف نے وزارت عظمیٰ کا منصب سنبھالنے کے پہلے روز ہی پانچ دن میں اسلام آباد میٹرو کے ٹریک ٹو پر بس سروس چلانے کا حکم دیا۔اسلام آباد میں پشاور موڑ سے ائرپورٹ تک میٹرو بس سروس توسیع منصوبہ گزشتہ چار سال سے زیر التواء تھا۔2017 میں اس وقت کے وزیر اعظم محمد نواز شریف نے اس منصوبے کا افتتاح کیا۔ منصوبہ 2018 میں مکمل ہونا تھا تاہم سابق حکومت کی جانب سے عدم توجہ کے باعث اس منصوبے کی تکمیل مسلسل تاخیر کاشکار ہوتی رہی۔
وزیراعظم محمد شہاز شریف نے منصوبے دورے کے موقع پر ہدایت کی کہ عوام کی سہولت کےلئے موٹروے پربھی میٹروسٹیشن بنایاجائے۔انہوں نے میٹروکو تین راستوں سے موٹروے سے جوڑنے کی فوری فزیبیلٹی کی تیاری کا بھی حکم دیا ہے۔وزیراعظم نے بھارہ کہواور روات سے پشاورموڑتک میٹروچلانےکےلئے فوری فزیبیلٹی تیارکرنےاورفیڈرروٹس کاجائزہ لینے کی بھی ہدایت کی ہے۔منصوبے پر تاخیر کیوں ہوئی ؟ وزیراعظم نےبرہمی کا اظہار کرتے ہوئے معاملے کی تحقیقات اور ذمہ داروں کا جلد تعین کرنے کا حکم بھی دیا ہے۔
پشاور موڑ سے اسلام آباد ائرپورٹ تک 25 کلومیٹر طویل میٹرو بس سروس میں ابتدائی طور پر 15 بسیں چلائی جائیں گی۔نئی بسوں کی فراہمی اور آئی ٹی سسٹم فعال بنانے کے بعدآئندہ 2 ماہ میں منصوبہ مکمل طور پر آپریشنل ہوجائے گا ۔9اسٹیشنوں پر مشتمل میٹربس سروس کا ٹریک ٹو فعال ہونے سے کشمیر ہائی وے پر ٹریفک کے دباؤ میں بھی خاطر خواہ کمی آئے گی۔چار سال کی تاخیر کے بعد پشاور موڑ میٹرو بس سروس کا آغاز منہ بولتا ثبوت ہے کہ ترقیاتی منصوبوں کی تکمیل میں پالیسیوں کا تسلسل ناگزیر ہے۔


شیئر کریں: