آن لائن کلاسز کے نام پر طلبہ سے مزاق

شیئر کریں:

امامیہ اسٹوڈنٹس آرگنائیزیشن پاکستان کے مرکزی جنرل سیکرٹری سید علی اویس زیدی نے کہا ہے کہ آن لائن کلاسز کے نام پر طلبہ کا مذاق اڑایا جا رہا ہے۔
طلبہ کا مستقبل تباہ کیا جا رہا ہے حالیہ سمسٹر کا فیس معاف کر کے یونیورسٹیاں کھول دی جائیں ۔
پاراچنار میں مشترکہ پریس کانفرنس کرتے آئی ایس او کے مرکزی جنرل سیکرٹری سید علی اویس زیدی، ڈویژنل صدر پشاور محمد ثقلین مہدی اور سیکرٹری تعلیم سہیل زمان نے کہا کہ بلوچستان، گلگت بلتستان، کشمیر اور قبائلی اضلاع سمیت ملک کے زیادہ تر علاقوں میں انٹرنیٹ، بجلی اور دیگر بنیادی ضروریات کا فقدان ہے۔
طلبہ آن لائن کلاسز سے فائدہ نہیں اٹھا سکتے اس لیے آن لائن کلاسز کے نام پر طلبہ کا مذاق نہ اڑا دیا جائے۔
ان کا مستقبل تباہی سے بچایا جائے اور یونیورسٹیوں کورونا ایس او پیز کے تحت کھول دی جائیں اور موجودہ سمسٹر کی فیس معاف کی جائے۔
راہنماؤں کا کہنا تھا کہ یونیورسٹیوں سمیت تعلیمی اداروں کی بندش سے طلبہ کا مستقبل تباہ ہو رہا ہے۔
فی الفور تمام تعلیمی ادارے کھول دئیے جائیں اور حکومت اس مسئلے کے حل کیلئے ایک جامع پالیسی تیار کریں۔
راہنماؤں نے قبائلی اضلاع میں تھری جی فور جی کی جلد بحالی کا مطالبہ کیا ایران اور چائنا کی طرح کورونا وائرس سے بچاو کیلئے موثر اقدامات اٹھائے جائیں۔


شیئر کریں: