آن لائن کلاسز کا بہانہ، موبائل واپس لینے پر بچے نے خودکشی کرلی

شیئر کریں:

آن لائن کلاسز کی آڑ میں بچے ویڈیو گیم کے عادی ہونے لگے ہیں۔
ویڈیو گیم کے بڑھتے ہوئے نشے نے ایک اور ممتا کی گود اُجاڑ دی۔
بھارت میں 12 سالہ بچے نے والدہ کی جانب سے موبائل فون واپس لینے پر خودکشی کر لی۔
افسوس ناک واقعہ ممبئی کے گووندی محلے میں پیش آیا۔

کورونا کی وبا اور اسکولوں میں چھٹیوں کے باعث بچوں کو آن لائن کلاسز پر زور دیا جا رہا ہے۔
بچے بھی والدین سے آن لائن کلاسز کا بہانہ بنا کر موبائل فون لینے کا اصرار کر رہے ہیں۔

بچوں کی فرمائش پوری کرنی چاہیے لیکن ساتھ ہی لاپرواہی کی بجائے ان پر کڑی نظر بھی رکھنی چاہیے۔
گھروں میں بچے آن لائن تعلیم کی بجائے ویڈیو گیمز پر زیادہ وقت گزار رہے ہیں۔

یہ عادت بچوں کے لئے انتہائی خطرناک اور مہلک ثابت ہو رہی ہے۔
ممبئی میں ویڈیو گیمز کے عادی بچے سے والدہ نے موبائل فون واپس لے لیا۔

بچے نے ویڈیو گیمز میں جو کچھ سیکھا اسے حقیقت میں بدل ڈالا۔
معصوم کو کیا معلوم جو کچھ وہ کرنے جا رہا ہے وہ اس کی زندگی لے جائے گا اور والدین
کو ہمیشہ کے لئے دکھ دے کر چھوڑ جائے گا۔

رپورٹس کے مطابق بھارتی شہر ممبئی کے گووندی محلے میں ویڈیو گیم کے عادی بچے نے
تیسرے فلور پر جا کر خود کو کمرے میں بند کر لیا۔

ممتا بچے کو ڈھونڈے نکلی تو بچے کو پنکھے سےلٹکا دیکھ کر ہی چونک گئی۔
اس نے فوری طور پر پڑوسیوں کو مدد کے لئے بلایا اور پھر بچے کو ممبئی کے اسپتال پہنچایا۔

ڈاکٹرز نے بچے کی موت کی تصدیق کر دی اور پوسٹمارٹم کے بعد لاش والدین کے حوالے کردی۔
ماہرین تعلیم کا ماننا ہےکہ آن لائن تعلیم بچوں کی صحت پر منفی اثرات مرتب کر رہی ہے۔
بچے جو کچھ وہ اسکول سے حاصل کرسکتے ہیں وہ آن لائن ایجوکیشن سے حاصل نہیں کر سکتے۔


شیئر کریں: