February 9, 2020 at 10:20 pm

خوشبوں کا شہر پیرس کشمیر کی آزادی کے نعروں سے گونج اٹھا۔ فرانس کی تاریخ کی کشمیریوں نے سب سے بڑی ریلی نکالی۔

ہزاروں کی تعداد میں لوگ پیرس کی سڑکوں پر نکل آئے۔ ریلی میں فرانسیسی شہری بھی شریک ہوئے اور بھارت کی انسانیت دشمن پالیسیوں کے خلاف نعرے لگائے۔

پیرس میں گار ڈی لسٹ سے ریپلک اسکوائر تک پاکستانی اور کشمیریوں نے انسانیت کی بقا کے لیے جمع ہوئے۔

کثیر تعداد میں جمع ہونے والوں نے ہندوستان کے ظالمانہ اقدام کے خلاف بھرپور احتجاجی ریلی نکالی۔

کشمیری بچوں اور عورتوں سے اظہار ہمدردی کے لیے بچے اور عورتیں بھی پیش پیش رہیں۔
مظاہرین نے کتبے اور پرچم ہاتھوں میں تھامے لوگوں کی توجہ اپنی طرف کرائی۔

پیرس کی فضاء “ہم کیا چاہتے آزادی اور کشمیر بنے گا پاکستان”کے نعروں سے گونجتی رہی۔
یاد رہے پانچ اگست 2019 کو بھارت کی جانب سے کشمیریوں کو حاصل خصوصی حق سے محروم کر دیا گیا تھا۔

5 اگست دنیا بھر میں انسانیت سے محبت کرنے والے کشمیریوں کے حق میں صدائے احتجاج بلند کر رہے ہیں۔

حیرت اس بات کی ہے انسانی حقوق کی تنظیمیں اور اقوام متحدہ مسلسل احتجاج نظر انداز کر رہی ہیں۔

لیکن کشمیری عوام پھر بھی احتجاجی تحریک جاری رکھے ہوئے ہیں۔

Facebook Comments