February 8, 2020 at 6:58 pm

خیبرپختونخوا کے سرکاری اسکولوں میں بچوں سے زیادہ اساتذہ غیر حاضر ہونے لگے۔
بنوں ،لکی مروت اورنگومیں ایک ماہ کے دوران چالیس فیصد اساتذہ چھٹی پر رہے۔

کیا اساتذہ بھی جعلی ہوتے ہیں؟


ایجوکیشن منیجمنٹ مانٹرنگ ٹیم خیبرپختونخوا نے رپورٹ محکمہ تعلیم کو ارسال کردی ہے۔
جس میں صوبے کے تمام سرکاری اسکولوں اور دفاتر میں بائیو میٹرک نظام کے تحت حاضری چیک کی گئی۔
رپورٹ کے مطابق ایک ماہ کے دوران جنوبی اضلاع بنوں، لکی مروت اور ہنگوکے سکولوں میں 40 فیصد سے زائد اساتذہ چھٹی پر رہے۔
ضلع بونیر، شانگلہ،تورغر اور کرک کے سکولوں کی حاضری 20 فیصد کم رہی۔

سرکاری اسکول انگلش میڈیم سے بھی مہنگے


اسی طرح پشاور ، صوابی، چترال اور کوہستان میں بھی درجنوں اساتذہ سکولوں سے غائب رہے۔
رپورٹ کے مطابق جنوری کے مہینے میں محکمہ تعلیم کے 50فیصد دفاتر میں بھی ملازمین کی حاضری کم رہی ۔
رپورٹ پرمحکمہ تعلیم خیبرپختونخوانے نوٹس لیتے ہوئے تمام ڈسٹرکٹ آفیسرز سے ایک ہفتے میں رپورٹ طلب کرلی ہے۔ جس کی بنیاد پرکارروائی ہوگی۔

Facebook Comments