March 25, 2020 at 10:32 pm

جان لیوا کورونا وائرس نے پورے کرہ عرض کو خوف زدہ کیا ہوا ہے۔
بچہ ہو یا بڑا سب ہی کورونا وائرس کے نام سے بھی خوف آنے لگتا ہے۔
دنیا بھر میں 196 ممالک ہیں ان میں سے بیشتر ملک کے عوام لاک ڈاؤن کی زد میں ہیں۔
کورونا وائرس انتہائی تیزی کے ساتھ ایک سے دوسرے شخص میں منتقل ہو جاتا ہے اسی وجہ سے سماجی رابطے منقطع کرنے کے لیے حکومتوں نے لاک ڈاؤن کر رکھا ہے۔
لاک ڈاؤن کی وجہ سے لوگ گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے ہیں۔
بیشتر سرکاری اور پرائیویٹ اداروں میں چھٹیاں دے دی گئی ہیں۔
سڑکوں پر ٹریفک نہ ہونے کے برابر ہوتا ہے جس کی وجہ سے لوگوں کو ضرورت کے بعد بھی گاآریاں نہیں مل پاتی ہیں۔
پبلک ٹرانسپورٹ نہ ہونے اور رکاوٹوں کی وجہ سے بھارت کی ریاست مدھیا پردیش میں ایک حاملہ عورت کو اسپتال پہنچانے میں اہل خانہ کو انتہائی مشکلات کا سامنا کرنا لڑا۔
بڑے جتن کے بعد خاتون کو اسپتال پہنچایا گیا اور بچی کی پیدائش ہوئی۔
اس موقع پر گھر والوں نے پوری دنیا کو ڈرانے والے کورونا وائرس کے نام پر ہی اپنی بچی کا نام “کورونا” رکھ دیا۔
بچی کی ماں کا کہنا ہے کہ آج دنیا کے ساتھ ساتھ پورے بھارت میں بھی عوام یکجا ہو کر کورونا کا مقابلہ کر رہے ہیں۔
اس یکجہتی کی یاد میں ہم نے اپنی بچی کا نام بھی “کورونا” رکھا ہے تاکہ جو مشکل وقت ہم دیکھ رہے ہیں اسے کبھی بھلایا نہ کاسکے۔
بھارت میں اس وائرس کی وجہ سے اب تک دس افراد ہلاک اور سیکڑوں متاثر ہوئے ہیں۔
یاد رہے دنیا بھر میں کورونا وائرس سے 19 ہزار 804 افراد ہلاک ہو چکے ہیں۔
اسی طرح چار لاکھ 46 ہزار 624 افراد متاثر ہیں اور ایک لاکھ 12 ہزار سے زائد صحت یاب بھی ہو چکے ہیں۔

Facebook Comments